بسم اللہ الرحمن الرحیم

‌ ۱۰بیع الثانی  شیعیان اہلبیت (علیہم السلام) کے لئے مصیبت کا دن ہے کیونکہ آج کے دن امام کاظم (علیہ السلام) کی لخت  جگر حضرت فاطمہ معصومہ (سلام اللہ علیہا) عباسی حکومت کے مظالم کی وجہ سے اس دنیا سے رخصت ہو گئیں۔امام کاظم (علیہ السلام) نے اپنی والا صفات بیٹی کا نام فاطمہ(سلام اللہ علیہا) رکھا اور آپ کے بھائی امام رضا (علیہ السلام ) نے آپ کو معصومہ کے لقب سے نوازا۔ دو معصوم اماموں کے ذریعہ  اس نام اور لقب  کا طی پانا  حضرت فاطمہ معصومہ (علیہا السلام) کی عظمت کو بیان کرتا ہے۔

حضرت معصومہ (علیہا السلام) کی سیرت اور ائمہ اطہار نے جو فضائل انکے بیان کئے ہیں اس سے اندازہ ہوتا ہے کہ آپ کا کتنا عظیم مقام ہے۔

حضرت معصومہ (علیہا السلام) نے اپنی جدہ ماجدہ حضرت فاطمہ زہرا (سلام اللہ علیہا) اور حضرت زینب (علیہا السلام) کی سیرت پر عمل کرتے ہوئے اپنے وقت کے امام کا دفاع کیا اور ولایت امام رضا (علیہ السلام) کی اہمیت کو اجاگر کیا۔ بی بی معصومہ (علیہا السلام) کا مدینہ سے طوس کی طرف سفر کرنا اور راستہ کی تمام مشکلات کو برداشت کرنا اس بات کی واضح دلیل ہے کہ آپ نے ولایت کے دفاع میں ہر ممکن کوشش کو  انجام دیا۔ آپ کی زندگی میں بہت سے ایسے نمونہ ملتے ہیں کہ جس سے آپ اور شہزادی کونین حضرت فاطمہ زہرا (علیہا لاسلام) کے درمیان بہت زیادہ شباہت نظر آتی ہے۔

اگر حضرت معصومہ قم (علیہا السلام) کے زیارت نامہ کو دیکھا جائے تو اس میں بھی بے پناہ فضیلتیں نظر آئیں گی  اور معلوم ہو گا کہ کتنی عظمت ہے آپ کی اللہ جل جلالہ کے نزدیک، کہ جہاں یہ بیان ہوا کہ [یا فاطمه اشفعی لی فی الجنه فإنّ لک عند الله شأن من شأن] اے حضرت فاطمہ جنت میں ہماری شفاعت فرائے گا کیونکہ اللہ کے نزدیک آپ کی خاص منزلت ہے۔

ایک حدیث کہ جسمیں آپ کی پیدائش سے پہلے ہی آپ کے لئے پیشنگوئی کی گئی تھی کے ذریعہ آپ کے بلند مقام کا اندازہ ہوتا ہے، ‌امام صادق (علیہ السلام) فرماتے ہیں کہ خداوند عالم کا ایک حرم ہے اور وہ  مکہ ہے، رسول اللہ ﷺ کا بھی ایک حرم ہے اور وہ مدینہ ہے، امیر المومنین (علیہ السلام) کا ایک حرم ہے اور وہ کوفہ ہے، ہمارا بھی ایک حرم ہے اور وہ قم ہے عنقریب میری نسل میں سے ایک بیٹی وہاں دفن ہو گی کہ جسکا نام فاطمہ ہوگا اور جو بھی انکی زیارت کرے گا اس پر جنت واجب ہو جائے گی۔

امام صادق (علیہ السلام) کی اس حدیث کی روشنی میں حضرت معصومہ (علیہاالسلام) کی عظمت اور زیادہ روشن ہوجاتی ہے  کہ جس میں آپ نے فرمایا [ تَدْخُلُ بِشَفاعَتِها شيعَتِيَ الْجَنَّةَ بِاَجْمَعِهِمْ] حضرت معصومہ (علیہا السلام) کی شفاعت کے ذریعہ تمام شیعہ جنت میں داخل کئے جائیں گے۔

پروردگارعالم ہم سب کو اس دنیا میں حضرت فاطمہ معصومہ(علیہاالسلام) کی زیارت اور آخرت میں شفاعت نصیب فرمائے۔